22

اگر نمازی نے جان بوجھ کر بلا عذر قبلہ سے سینہ پھیر دیا تو کیا حکم ہو گا؟ وقت سے کیا مراد ہے ، نیز مکروہ اوقات کون کونسے ہیں ، اور ان میں نماز و تلاوت کا کیا حکم ہے؟

سوال: 💚📖❤️ اگر نمازی نے جان بوجھ کر بلا عذر قبلہ سے سینہ پھیر دیا تو کیا حکم ہو گا؟
جواب: نمازی نے اگر قبلہ سے بلا عذر جان بوجھ کر سینہ پھر دیا اگرچہ فوراً ہی قبلہ کی طرف ہو گیا ،نماز فاسد ہو گئ۔ اور اگر بغیر ارادے کے پِھر گیا اور تین تسبیح (یعنی تین بار سبحان اللہ کہنے) کی مقدار وقفہ نہ ہوا تو نماز ہو گئ۔ (بحرالرائق)🌸🟪🌸

سوال: وقت سے کیا مراد ہے ، نیز مکروہ اوقات کون کونسے ہیں ، اور ان میں نماز و تلاوت کا کیا حکم ہے؟*📚💐
جواب: جو نماز (فرض، واجب ، نفل) وغیرہ پڑھنی ہے اس کا وقت ہونا ضروری ہے۔ ہر نماز جو اپنے وقت میں پڑھی جائے وہ اداء ہوتی ہے اور اگر وقت گزار کر پڑھی جائے تو قضاء ہو جاتی ہے۔ تین اوقات مکروہ ہیں: ① غروب آفتاب سے پہلے اور ② طلوع کے بعد ، 20 ، 20 منٹ اور③ نصف النّھار شرعی سے زوال تک۔ ان تین اوقات میں کوئی نماز (فرض ، واجب ، نفل ، قضاء) جائز نہیں ، ہاں اسی دن کی عصر کی نماز پڑھ سکتے ہیں۔▪️بہتر یہ ہے کہ ان اوقات میں تلاوت نہ کریں بلکہ ذکر و درود میں مشغول رہیں۔(بہار شریعت)❤️❦︎………

🌸 فجر اور ظہر کا وقت⏰
☚فجر کا وقت صبح صادق سے سورج کی کرن چمکنے تک ہے اور ان علاقوں میں یہ وقت کم از کم ایک گھنٹہ اٹھارہ منٹ اور ذیادہ سے ذیادہ ایک گھنٹہ پینتیس منٹ ہے نہ اس سے کم ہو گا نہ اس سے ذیادہ۔ (فتاویٰ رضویہ)📚
☚ظہر کا وقت سورج ڈھلنے سے اس وقت تک ہے کہ ہر چیز کا سایہ اصلی سایہ کے علاوہ دو گنا ہو جائے۔🌻

💚 عصر کا وقت⏰
عصر کا وقت ،ظہر کا وقت ختم ہونے کے بعد یعنی اصلی سایہ کے علاوہ دوگنا سایہ ہونے سے سورج ڈوبنے تک ہے۔ ان علاقوں میں یہ وقت کم از کم ایک گھنٹہ 35 منٹ اور ذیادہ سے ذیادہ دو گھنٹے 6 منٹ ہے۔ (سنی بہشتی زیور)

💜 مغرب کا وقت⏰
📚 مغرب کا وقت، سورج کی ٹکیا ڈوب جائے تو مغرب کا وقت شروع ہو جاتا ہے اور شفق ڈوب جانے تک رہتا ہے اور شفق اس سفیدی کا نام ہے جو مغرب کی جانب جنوب شمال میں صبح صادق کی طرح پھیلی رہتی ہے ، اور یہ وقت ان شہروں میں کم از کم ایک گھنٹہ اٹھارہ منٹ اور ذیادہ سے ذیادہ ایک گھنٹہ پینتیس منٹ ہوتا ہے۔ یعنی ہر روز کے فجر اور مغرب دونوں کے وقت برابر ہوتے ہیں۔ (سنی بہشتی زیور)💜

❤️ عشاء کا وقت⏰
📖 عشاء کا وقت ، مغرب کا وقت ختم ہوتے ہی (یعنی شفق کے ڈوبتے ہی) عشاء کا وقت شروع ہو جاتا ہے اور صبح صادق تک رہتا ہے۔ (فتاویٰ رضویہ)🌻

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں