29

اگر معتکف کا بہت ہی قریبی رشتہ دار فوت ہو جائے تو کیا معتکف اس کے جنازے کے لیے جا سکتا ہے؟

سوال: اگر معتکف کا بہت ہی قریبی رشتہ دار فوت ہو جائے تو کیا معتکف اس کے جنازے کے لیے جا سکتا ہے؟🏵••••🔶
جواب: اگر معتکف کا بہت ہی قریبی رشتہ دار فوت ہو جائے تو معتکف اس کے جنازے کے لیے جا سکتا ہے اور جانے کی وجہ سے گنہگار بھی نہیں ہو گا ، لیکن جنازے میں جانے کے لیے مسجد سے باہر نکلتے ہی اس کا اعتکاف ٹوٹ جائے گا جس کی بعد میں قضا کرنی ہو گی۔(از حاشیۃ الطحطاوی علی مراقی الفلاح)
✴️•••••🧡••••✴️••••🧡••••✴️

سوال: اگر کسی نے معتکف کو زبردستی مسجد سے نکال دیا تو کیا وہ کسی دوسری مسجد میں اعتکاف کو مکمل کر سکتا ہے؟🖤
جواب: اگر کسی نے معتکف کو زبردستی مسجد سے نکال دیا تو وہ فوراً کسی دوسری مسجد میں جا کر اعتکاف کو مکمل کر سکتا ہے۔(فتاویٰ عالمگیری)📚❣️

سوال: اگر معتکف نے کسی کو گالی دی یا لڑائی جھگڑا کیا تو کیا اس کا اعتکاف ٹوٹ جائے گا؟
جواب:۞☜︎︎︎ اگر معتکف نے کسی کو گالی دی یا کسی سے جھگڑا کیا تو اس کا اعتکاف نہیں ٹوٹے گا لیکن اعتکاف کی نورانیت ختم ہو جائےگی۔(فتاویٰ عالمگیری)🌹

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں